NewsHub

برسلز میں کشمیر کونسل ای یو کے زیراہتمام مقبول بٹ اور افضل گرو کی برسی پر تقریب کا انعقاد کیا گیا

Posted on February 11, 2019 By Majid Khan تارکین وطن

Brussels – Kashmir Council EU Butt-Guru Barsi

اوسلو (پ۔ر) یورپی دارالحکومت برسلز میں ایک تقریب میں کشمیر کونسل یورپ (ای یو) نے عظیم کشمیری شہداء امقبول بٹ اور افضل گرو کو زبردست خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے بھارتی حکومت سے کہا ہے کہ وہ ان دونوں شہداء کے اجسادخاکی کو ان کے لواحقین کے حوالے کرے۔ دونوں شہداء کی برسی کے ایام کی مناسبت سے اس تقریب کا انعقاد کیا گیا۔ تقریب کا باقاعدہ آغاز تلاوت کلام پاک سے ہوا جس کی سعادت سینئرصحافی حافظ انیب راشد نے حاصل کی۔

تقریب سے کشمیرکونسل ای یو کے سینئرعہدیدار چوہدری خالد جوشی، ممتاز کشمیری رہنماء سردار صدیق، کشمیرانفو کے چیئرمین میرشاہجہان، سینئر صحافی اور دانشور خالد حمید فاروقی، برسلز پارلیمنٹ کے رکن ڈاکٹرظہورمنظور، مقامی کونسلر عامرنعیم سنی اور کشمیری رہنماء راجہ خالد نے خطاب کیا۔

مقررین نے کہاکہ ان عظیم کشمیری سپوتوں نے شمع کی مانند تحریک آزادی کشمیرکو روشنی فراہم کی ہے۔انھوں نے بھارتی حکومت پر زوردیاکہ شہید مقبول بٹ اور افضل گرو کی میتوں کوکشمیرمیں انکے ورثاء کے حوالے کیاجائے تاکہ وہ اپنے رسم و رواج کے مطابق شہدا کی آخری رسومات ادا کرسکیں اوردرست طریقے سے تدفین ہوسکے۔

مقررین کا مزید کہنا تھا کہ نے عالمی برداری خصوصاً یورپی یونین بھارتی رویے کا سختی سے نوٹس لے کرنئی دہلی پر دباؤ ڈالے تاکہ افضل گرو اور مقبول بٹ شہید کی میتوں کو ورثاء کے حوالے کیاجائے ۔ انھوں نے کہاکہ کتناظلم اورغیرانسانی فعل ہے کہ مقبول بٹ اور افضل گرو کوپھانسی دینے کے بعد انکے اجسادخاکی کو بھی بھارت نے جیل میں مقید کر رکھا ہے۔

دنیا کا کوئی بھی مہذب معاشرہ اس طرح کارویہ اختیارنہیں کرسکتا۔ انھوں نے واضح کیاکہ پھانسیاں دے کر اور ظلم و جبر کے ذریعے بھارت اپنے مذموم مقاصد حاصل نہیں کرسکتا بلکہ اسے کشمیریوں کوانکا حق خودارادیت دیناہوگا۔ انھوں نے مقبوضہ کشمیر میں قید سیاسی رہنماؤں کی رہائی اور ماورائے عدالت قتل و غارت اور نہتے اور پرامن مظاہرین پر پیلٹ گن جیسے مہلک ہتھیار کے استعمال کی روک تھام کا بھی مطالبہ کیا۔ ۔ آخر میں شہدائے کشمیر خصوصاً مقبول بٹ اور افضل گرو کے بلند درجات کے لیئے خصوصی دعا بھی کی گئی اس موقع پر شرکاء میں مہرندیم، راجہ قیوم، چوہدری اشرف، ملک اخلاق اور محمد شرجیل نمایاں تھے۔

Read More
  • 675
Loading ···
No more