NewsHub

ماں دانتوں سے کاٹ کر خون پیتی تھی : تشدد کا شکار بچے کا انکشاف

حافظ آباد(بیورورپورٹ)ماں یا ڈائن، دانتوں سے کاٹ کرخون پیتی ،بہیمانہ تشدد کا شکار بچے کے ہسپتال میں ہوش ربا انکشافات، ڈاکٹروں کے مطابق وحیدہ کو سزا نہیں علاج کی ضرورت ہے ،جوڈیشل مجسٹریٹ نے نفسیاتی علاج کیلئے ہسپتال کی بجائے ملزمہ کو جیل بھجوا دیا۔نواحی قصبہ جلالپوربھٹیاں میں سرکاری ہسپتال کی کالونی میں رہائش پذیر ذوالفقار ڈسپنسر کی بیوی وحیدہ نے اپنے 14سالہ بیٹے پھول ذوالفقار کو کلاس نہم کے امتحانات قریب آنے پر مکمل تیاری نہ کرنے پر بری طرح تشدد کا نشانہ بنایا تھا اس کو چھری سے شدید زخمی کیا اور ایک کمرے میں بندکردیا جہاں سے پھول ذوالفقار کو اہل علاقہ نے کھڑکی توڑ کر باہر نکالا۔پھول ذوالفقارکے جسم پر کاٹنے کے کم وبیش 100کے قریب نشانات تھے ہسپتال میں داخل پھول ذوالفقار نے ہوش ربا انکشافات کرتے ہوئے بتایا کہ اس کی والدہ وحیدہ بی بی اس پربری تشددکرتی گلے میں اتنی زورسے کپڑا ڈال کر گھونٹتی کہ اسے الٹیاں آجاتیں اور مرنے کے قریب ہوجاتا،اکثر اوقات دانتوں سے کاٹ کر خون پیتی اور کہتی کہ اسے مزہ آرہا ہے اہل محلہ نے کال کرکے پولیس تھانہ جلالپوربھٹیاں کو بلایا جس نے وحیدہ بی بی کو حراست میں لیکر اس کے خاوند ذوالفقار ڈسپنسر کی درخواست پر مقدمہ درج کرلیا ،جوڈیشل مجسٹریٹ نے اس درندہ صف ماں وحیدہ بی بی کو کسی نفسیاتی ہسپتال کی بجائے جیل بھیج دیا حالانکہ اس کیس کے متعلق ڈاکٹر وں کا کہنا ہے کہ وحیدہ بی بی کو سزا کی نہیں نفسیاتی علاج کی ضرورت ہے جس میں مریضہ کا مکمل بیک گراو¿نڈ دیکھا جانا چاہیے۔

Read More
  • 474
Loading ···
No more