NewsHub

موبائل فون کی بیٹری سے متعلق 3 غلط فہمیاں

عالمی مارکیٹ میں موبائل فون کی جن خصوصیات کو سب سے زیادہ اہمیت دی جاتی ہے ان میں لمبی یا بڑی بیٹری بھی شامل ہے۔ چونکہ بیٹری کے بغیر موبائل فون بالکل بے کار ثابت ہوتا ہے اس لیے لوگ بیٹری کا خیال رکھنے پر خاص توجہ دیتے ہیں۔ گو کہ یہ اچھی عادت ہے تاہم اس چکر میں کئی ایک باتیں ایسی مشہور ہوچکی ہیں کہ جن کا حقیقت سے دور کا بھی واستہ نہیں ہے۔

اب موبائل فون پھٹنے کے واقعات سے متعلق افواہوں ہی کو دیکھ لیجیے کہ لوگ جن کا قصور وار بے چاری بیٹری کو قرار دے رہے ہیں حالانکہ یہ مسائل موبائل فون کی بناوٹ کی وجہ سے سامنے آئے۔ دلچسپ حقیقت یہ ہے کہ دور جدید کے تمام اسمارٹ فون لیتھیئم بیٹری سے چلتے ہیں اور اگر ان میں کوئی مسئلہ ہوتا تو ہر قسم کا فون پھٹنے لگتا، جو کہ کبھی نہیں ہوا۔ بہرحال، ذیل میں اس طرح کی اور بھی کئی باتیں بیان کر رہے ہیں جو موبائل فون کی بیٹری سے منسوب کرلی گئی ہیں۔

رات بھر چارجنگ
آج کو فون صرف موبائل ہی نہیں اسمارٹ بھی ہے۔ یہ اسمارٹ فون بخوبی جانتا ہے کہ کب موبائل کی بیٹری پوری طرح چارج ہوچکی ہے اور پھر اسے ازخود کیسے چارجنگ بند کرنا ہے۔ اس لیے رات بھر موبائل فون چارجنگ پر لگا رہے تو بھی اس سے چارجنگ یا موبائل فون کو کوئی نقصان نہیں پہنچتا۔ اس لیے بار بار جاگ کر فون کی بیٹری چیک کرنا چھوڑیں اور ایک بار چارجنگ پر لگا کر آرام سے سوجائیں۔

چارجنگ کے دوران استعمال
چارجنگ کے دوران موبائل فون کو ہاتھ لگانے سے بھی پرہیز کا مشورہ دیا جاتا ہے جیسا کہ وہ اسمارٹ فون نا ہو بلکہ بجلی کا کھمبا ہو جس پر "خطرہ 440 والٹ" لکھا ہوا ہے۔ دیگر باتوں کی طرح یہ بھی محض غلط فہمی ہے کہ اسمارٹ فون سے بجلی کا جھٹکا لگ سکتا ہے۔ اب سے کچھ روز پہلے آپ نے پڑھا ہوگا کہ موبائل چارج کرتے ہوئے ایک شخص ہلاک ہوگیا۔ یہ اور اس جیسے دیگر واقعات دراصل خراب چارجر یا پھر ایسی جگہ موبائل چارج کرنے کی کوشش میں پیش آتے ہیں جہاں بجلی پکڑنے والی چیزیں موجود ہوتی ہیں۔ اگر آپ اپنے کمرے میں اچھے چارجر سے فون چارجنگ پر لگائیں تو پھر گیم کھیلیں یا فیس بک استعمال کریں، کچھ نہیں ہوگا۔

وائی فائی اور جی پی ایس
ایک اور بات مشہور ہے کہ وائی فائی کو سرچ کرنے یا جی پی ایس کی مدد سے جگہ بتانے والی ایپس بہت زیادہ بیٹری پیتی ہیں۔ گو کہ یہ بات درست ہے کہ موبائل فون کی ہر سروس کچھ نہ کچھ بیٹری استعمال کرتی ہی ہے تاہم ان کے ساتھ "بہت زیادہ" لگانا درست نہیں ہے۔ اسمارٹ فون کی دیگر سہولیات جیسا کہ فون کال اور میسیج کرنے وغیرہ بھی اتنی ہی بیٹری استعمال کرتی ہیں کہ جتنا وائی فائی اور جی پی ایس کے زیر استعمال ہوتی ہے۔ اس لیے جب کبھی آپ کو موجودہ جگہ یا منزل کا تعین کرنا مقصود ہوتو بلاجھجک لوکیشن سروس استعمال کریں۔

Read More
  • 522
Loading ···
No more