NewsHub

کلبھوشن کے پاس اپیل کا وقت ختم‘ بھارتی حکام لاعلم‘ عالمی عدالت 6 ہفتے میں دوبارہ سماعت کرے: پاکستان


دی ہیگ اسلام آباد نئی دہلی لندن (نوائے وقت رپورٹ نیوز ایجنسیاں) پاکستان نے عالمی عدالت کو 6 ہفتوں میں کلبھوشن کیس کی دوبارہ سماعت کی درخواست دیدی۔ ذرائع کے مطابق پاکستان عالمی عدالت انصاف میں اپنا وکیل بھی نہیں بدلے گا۔ کلبھوشن کے پاس اپنی سزا اپیلٹ کورٹ میں چیلنج کرنے کا گزشتہ روز آخری دن تھا۔ قانون کے مطابق 40 روز میں سزائے موت کو چیلنج کیا جا سکتا ہے۔ کلبھوشن یادیو کو 10 اپریل کو سزائے موت سنائی گئی تھی۔ مگر عالمی عدالت انصاف میں چیمپئن بننے والا بھارت خود بھی نہیں جانتا کہ کلبھوشن کی جانب سے اپیل دائر کی گئی ہے یا نہیں۔ اس حوالے سے صحافی کے سوال پر بھارتی دفتر خارجہ کے ترجمان بغلیں جھانکنے لگے۔ کلبھوشن یادیو فیصلے کے بعد 60 روز میں آرمی چیف سے اپیل کر سکتا ہے۔ آرمی چیف کے فیصلے کے بعد 90 روز میں کلبھوشن صدر پاکستان سے اپیل کر سکتا ہے۔ دوسری طرف پاکستان کلبھوشن یادیو کیس میں آئندہ سماعت پر ایڈہاک جج بھی بھیجے گا۔ پاکستان کی جانب سے ایڈہاک جج کوئی سینئر وکیل یا جج بھی ہو سکتا ہے۔ پاکستان نے مسئلہ کشمیر کو بھی عالمی عدالت انصاف میں لے جانے پر غور کر رہا ہے۔ ذرائع کے مطابق پاکستانی حکام بھارت کے ساتھ آبی تنازعات کو بھی عالمی عدالت میں اٹھانے پر غور کر رہے ہیں۔ وزارت خارجہ نے متعلقہ اداروں سے سفارشات مانگ لیں۔ دریں اثنا حکومت نے اعتراف کیا ہے کہ کلبھوشن کیس کی تیاری ٹھیک سے نہیں کی گئی۔ مشیر خارجہ سرتاج عزیز نے نجی ٹی وی سے گفتگو کرتے کہا کہ کیس کی تیاری کیلئے تین سے چار دن ملے تھے ہمیں کیس کی تیاری کیلئے زیادہ وقت نہیں ملا لیکن چار دن میں ہم کچھ نہیں کر سکتے تھے۔ انہوں نے کہا کہ ہم وکلا کی بڑی ٹیم بنا رہے ہیں۔ ایڈہاک جج کی تعیناتی کی جائے گی۔ کلبھوشن سے متعلق عالمی عدالت کا فیصلہ پہلے سے متوقع تھا اگلے مرحلے کیلئے ہمارا کیس بہت مضبوط ہے۔ بھارت نے عالمی عدالت جا کر کشمیر، آبی تنازعات کا راستہ کھول دیا۔ اٹارنی جنرل اشتر اوصاف کے مطابق سماعت کے دوران عدالت کے دائرہ اختیار سے متعلق نکتے کو پھر اٹھایا جائے گا۔
Read More
  • 280
  • 137
Loading ···
No more