NewsHub

نواز شریف کو 24 گھنٹے طبی نگرانی کی ضرورت ہے، میڈیکل بورڈ

لاہور: سابق وزیراعظم میاں محمد نوازشریف کی صحت کا معائنہ کرنے کے لیے تشکیل دیے جانے والے چوتھے میڈیکل بورڈ نے انہیں ماہرین کی نگرانی میں مسلسل امراضِ قلب کے حوالے سے دیکھ بھال کی ضرورت ہے جہاں 24 گھنٹے انہیں اس سلسلے میں دیگر سہولیات بھی دستیاب ہوں۔

ڈان اخبار کی کے مطابق حکومتِ پنجاب کی جانب سے جاری میڈیکل بورڈ کی رپورٹ میں کہا گیا کہ انہیں دوبارہ ایسی جگہ منتقل کیا جائے جہاں ایک ہی چھت تلے انہیں ہر قسم کی طبی سہولت ہر وقت موجود ہو۔

واضح رہے کہ اس سے قبل خصوصی میڈیکل بورڈ نے متفقہ طور پر نواز شریف کو دل کا عارضہ لاحق ہونے کی تشخیص کی تھی۔

رپورٹ میں کہا گیا کہ ماہرِ معالجِ قلب کی رائے میں ضروری سمجھا جائے تو گزشتہ طبی تاریخ اور موجودہ تشخیص کے ہمراہ اس سلسلے میں ابتدائی طور پر کسی بھی معالجِ قلب سے مشاورت کی جاسکتی ہے۔

یہ بھی پڑھیں: نوازشریف کی تضحیک کی جارہی ہے، رحم کی بھیک نہیں چاہیے، مریم نواز

دوسری جانب پاکستان مسلم لیگ (ن) نے مطالبہ کیا کہ سابق وزیراعظم کو متعلقہ اور جدید سہولیات سے مزین ہسپتال میں فوری طور پر منتقل کیا جائے۔

اس ضمن میں مسلم لیگ (ن) کی ترجمان مریم اورنگزیب کا کہنا تھا کہ ’نوازشریف کے صحت کے سلسلے میں یہ سیاسی سرکس اور تحریک انصاف کا برا رویہ شرمناک ہے‘۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ نوازشریف کے معالجین کی تجویز کے باوجود انہیں امراضِ قلب کے ہسپتال منتقل کرنے کے بجائے سروسز ہسپتال بھیجا گیا، پنجاب حکومت کو نواز شریف کو دل کے ہسپتال منتقل کرنے کا فیصلہ کرنے میں 4 دن کیوں لگے۔

مزید پڑھیں: نواز شریف کا علاجِ قلب کیلئے پنجاب انسٹیٹیوٹ آف کارڈیالوجی جانے سے انکار

ان کا مزید کہنا تھا ان سب کا مقصد نواز شریف، ان کے اہلِ خانہ اور ان کے لاکھوں چاہنے والوں کو ذہنی اذیت دینا ہے، مریم نواز نے مطالبہ کیا کہ’ نواز شریف کو فوری طور پر متعلقہ ہسپتال منتقل کیا جائے جہاں ان کے تجویز کردہ امراض کے علاج کی مکمل سہولت موجود ہو‘۔

خیال رہے کہ نوازشریف کو 5 دن سروسز ہسپتال میں داخل رہنے کے بعد دوبارہ کوٹ لکھپت جیل منتقل کردیا گیا تھا۔

Read More
  • 730
Loading ···
No more